شارجہ ٹیسٹ کا آج سے آغاز, مصباح الحق انگلینڈ کیخلاف دو صفر سے کامیابی کیلئے پر اعتماد

شارجہ(اسپورٹس ڈیسک)پاکستان اور انگلینڈ کے درمیا ن شارجہ ٹیسٹ کا آج سے آغاز ہو رہا ہے ،سیریز میں دو،صفر سے کامیابی کیلئےhamwatan پراعتماد قومی کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ وہ بہترین کرکٹ کھیلتے ہوئے اس میچ کو جیتنے کی کوشش کریں گے اورمطلوبہ نتائج کیلئے کوئی پہلو نظر انداز نہیں کیا جائے گا،ان کنڈیشنز میں آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ سے قدرے بہترانگلش ٹیم سے سخت مقابلے کی توقع کی جا سکتی ہے ،نئی وکٹ کے بارے میں کوئی اندازہ نہیں، تین اسپنرز کھلانے پر غورکر رہے ہیں لیکن پچ کو دیکھ کر نہیں لگتا کہ یہ اسپن بالرز کیلئے سازگار ہو گی،ٹیسٹ کرکٹ میں اہمیت کے حامل بیٹسمین اظہرعلی کی ٹیم میں واپسی لازمی ہے ۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان اور انگلینڈ کی ٹیمیں آج ہائر موبائل کپ کے سلسلے میں کھیلی جانے والی سیریز کے تیسرے اور فیصلہ کن معرکے کیلئے پاکستانی وقت کے مطابق صبح گیارہ بجے شارجہ کرکٹ گراؤنڈ میں صف آراء ہوں گی تو ہوم ٹیم کی کوشش ہو گی کہ وہ کامیابی کے ساتھ دو،صفر کا نتیجہ حاصل کرے جبکہ انگلش ٹیم نے سیریز برابر کرنے کو ہدف بنایا ہوا ہے ۔ قومی ٹیسٹ کپتان مصباح الحق کا کہنا تھا کہ ابوظہبی اور دبئی کے ٹیسٹ ختم ہو چکے جن کا آئندہ ٹیسٹ پر کوئی اثر نہیں پڑے گا کیونکہ اگلے ٹیسٹ کے بارے میں ذہن بناتے ہوئے وہ پچھلے مقابلوں کے بارے میں نہیں سوچتے کیونکہ ہر نیا مقابلہ یکسر مختلف ہوتا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ ان کی نگاہیں شارجہ ٹیسٹ پر مرکوز ہیں اور اسے جیت کر نتیجہ دو،صفر کرنے کیلئے وہ کسی بھی پہلو کو نظر اانداز نہیں کریں گے ۔ قومی کپتان کا کہنا تھا کہ لازمی سی بات ہے کہ گزشتہ میچ جیت کر پوری ٹیم کا اعتماد بلند ہو جاتا ہے اور چونکہ یہ میچ پاکستان کیلئے بہت زیادہ اہمیت کا حامل ہے لہٰذا وہ اسے جیتنے کی پوری کوشش کریں گے کیونکہ یو اے ای میں حالیہ برسوں کے دوران جن ٹیموں سے پاکستان کا سامنا ہوا ان میں انگلینڈ سب سے بہتر ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ ان کنڈیشنز میں انگلینڈ کو آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ سے بہتر کہا جا سکتا ہے جس کی وجہ قدرے مختلف وکٹیں بھی ہو سکتی ہیں لیکن انگلش ٹیم کو اس بات کا کریڈٹ دینا پڑے گا کہ اس نے ڈٹ کر مقابلہ کیا اور گزشتہ دو ٹیسٹ میچوں میں اس کی جانب سے منظم بیٹنگ اور بالنگ کا مظاہرہ قابل دید تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ انگلش ٹیم کیخلاف وہ سخت مقابلے کی توقع کر رہے ہیں جو جیت کر سیریز برابر کرنے کی کوشش کرے گی اور پاکستانی ٹیم کو اس کا سامنا کرنے کیلئے حقیقی طور پر تیار رہنا پڑے گا۔ پاکستان نے شارجہ میں کھیلے گئے سات میں سے تین ٹیسٹ جیتے ہیں جس میں گزشتہ برس کیویز کیخلاف اننگز کے فرق سے کامیابی بھی شامل ہے اوراس میدان کی پچ سپاٹ اور بیٹنگ کیلئے سازگار سمجھی جاتی ہے لیکن حال ہی میں اسے دو انچ کھود کر اس کی مٹی تبدیل کی گئی ہے ۔ مصباح الحق کا کہنا ہے کہ وہ بھی دوسروں کی طرح اس وکٹ کے بارے میں کوئی اندازہ نہیں لگا سکتے کیونکہ اسے حال ہی میں تبدیل کیا گیا ہے اور امید ہی کی جا سکتی ہے کہ یہ پاکستانی اسپنرز کیلئے سازگار ثابت ہوگی۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ اس معرکے میں تین اسپنرز کھلانے پر غور کر رہے ہیں لیکن وکٹ کو دیکھ کر نہیں لگتا کہ گیند اس پر زیادہ ٹرن ہو گی لہٰذا اس بارے میں حتمی فیصلہ ٹاس سے قبل ہی ہوگا۔ عمران خان کی انجری کے باعث راحت علی یا جنید خان کی ٹیم میں واپسی کے بارے میں ہیڈ کوچ بھی نشاندہی کر چکے ہیں تاہم راحت علی کے ساتھ گزشتہ دو ٹیسٹ میچوں سے محروم اظہرعلی کی واپسی کا امکان ہے ۔ مصباح الحق کا کہنا تھا کہ ظاہر سی بات ہے کہ اظہرعلی کی واپسی ہو گی جو ٹیم کیلئے اہمیت کے حامل بیٹسمین ہیں اور ان کی پچھلی کارکردگی کی بھی قدر ہے لیکن ابھی اس بارے میں کچھ کہنا مشکل ہے کہ اننگز کا آغاز کون کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ اظہرعلی ٹیسٹ کرکٹ میں ان کے اہم ترین بیٹسمین ہیں جن کی واپسی سے بیٹنگ لائن مزید بہتر ہو جائے گی۔

Pin It

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <strike> <strong>