این اے 122 ضمنی انتخاب؛ نون اور جنون کے درمیان فائنل راؤنڈ شروع

1لاہور: قومی اسمبلی کے حلقے این اے 122 میں ضمنی انتخابات کے لئے ووٹنگ کا عمل جاری ہے۔

قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 122 میں ضمنی انتخاب کے لئے ووٹنگ کا عمل صبح 8 بجے شروع ہوا جو بلا تعطل شام 5 بجے تک جاری رہے گا۔ حلقے میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 3 لاکھ 47 ہزار 762 ہے جس میں سے مرد ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 90 ہزار 328 ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما ایاز صادق نے شیخ سردار ہائی اسکول گڑھی شاہو میں اپنا ووٹ کاسٹ کیا۔
حلقے میں 284 پولنگ اسٹیشنز قائم کئے گئے ہیں جس میں سے 80 کو حساس قرار دیا گیا گیا ہے۔ تمام پولنگ اسٹیشنز پر فوجی اہلکار تعینات کئے گئے ہیں جب کہ 5 ہزار پولیس اہلکار ڈیوٹی کے فرائض سرانکام دیں گے۔ الیکشن ڈیوٹی کے لئے پولیس نے 38 مقامات پر ناکہ بندی کی ہے۔ پی پی 147 میں بھی آج پولنگ ہو گی جس کے لئے (ن) لیگ کے محسن لطیف اور تحریک انصاف کے شعیب صدیقی کے درمیان مقابلہ ہوگا۔
الیکشن کمیشن کے مطابق ضمنی انتخابات کے لئے پریزائڈنگ افسران کو مجسٹریٹ کے اختیارات دیئے گئے ہیں۔ ووٹر کو پولنگ اسٹیشنز سے بھگانا یا انھیں ٹرانسپورٹ فراہم کرنا جرم ہوگا، زائد المعیاد شناختی کارڈ پر ووٹ ڈالنے کی اجازت ہو گی تاہم فوٹو کاپی اور نادرا کے ٹوکن پر ووٹ ڈالنے کی اجازت نہیں ہو گی۔
الیکشن کمیشن نے تمام پولنگ اسٹیشنز پر سی سی ٹی وی کیمرے نصب کرتے ہوئے مرکزی آفس میں کنٹرول روم بھی قائم کردیاجس کی نگرانی صوبائی چیف الیکشن کمشنر کریں گے جب کہ اسلام آباد میں قائم کئے گئے کنٹرول روم کی نگرانی خود چیف الیکشن کمشنر اور سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کی۔
لاہور کے علاقے بستی سیداں شاہ اپر مال روڈ پر پولیس کی موجودگی میں (ن) لیگ اور تحریک انصاف کے کارکن آپس میں گھتم گھتا بھی ہوئے، ایک دوسرے پر لاتوں اور مکوں کی برسات کی گئی، کرسیاں چلائی گئیں اور مخالفین کے بینرز اکھاڑ دیئے گئے۔ تحریک انصاف کے مشتعل کارکنوں نے (ن) لیگ کا پولنگ کیمپ اکھاڑ کر پھینک دیا تاہم فوجی جوانوں کی آمد کے بعد حالات پر قابو پایا گیا اور دونوں جماعتوں کے کارکن اپنے اپنے کیمپوں میں چلے گئے۔ مسلم لیگ (ن) کے ایم پی اے وحید گل اور آئی ایس ایف کے صدر نے اپنے اپنے کارکنوں کو پر امن رہنے کی تلقین کی ہے۔ پی ٹی آئی اور تحریک انصاف کے کارکنوں کے درمیان تصادم پولنگ بوتھ نمبر 89، 90، 91، 92 اور 95 پر ہوا تاہم اس سارے عمل کے باوجود پولنگ کا عمل بلا تعطل جاری رہا۔
اس کے علاوہ گڑھی شاہو میں (ن) لیگ اور تحریک انصاف کے امیدواروں کی گاڑیاں آمنے سامنے آنے پر دونوں جماعتوں کے کارکنان نے ایک دوسرے کے خلاف نعرے بازی کی جب کہ سمن آباد کے علاقے میں بھی دونوں جماعتوں کے کارکنان کے درمیان ہاتھا پائی دیکھنے میں آئی۔
این اے 122 لاہور میں مسلم لیگ (ن) کے سردار ایاز صادق اور تحریک انصاف کے علیم خان کے درمیان سخت مقابلے کی توقع ہے جب کہ پیپلزپارٹی کے عامر حسین بھی اس حلقے سے میدان میں ہیں۔ اس کے علاوہ این اے 144 اوکاڑہ میں بھی ضمنی انتخابات کے لئے پولنگ کا عمل شروع ہو چکا ہے جس میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما علی عارف چوہدری اور آزاد امیدوار چوہدری ریاض کے درمیان مقابلہ ہوگا۔

Pin It

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

You may use these HTML tags and attributes: <a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <strike> <strong>