بلڈ مون: چاند 27 اور 28 ستمبر کی درمیانی شب کو لہو رنگ کرنے کو تیار!

hamwatanپورا چاند ہو ساتھ گرہن بھی لگا ہو اور پھر لہو رنگ بھی ہو تو گویا چاند کے حسن میں 4 چاند لگ جائیں گے۔ 27 اور 28 ستمبر کی درمیانی رات ہونے والے چاند گرہن کو بلڈ مون کہا جا رہا ہے۔
لاہور: چاند ہمیشہ سے انسان کے لئے پرکشش رہا ہے، مگر بلڈ مون کی اپنی ہی ادا ہے۔ یہ عمل اس طرح ہوتا ہے کہ چاند زمین کے مدار سے انتہائی قریب آ جائے تو اسے سپر مون کہا جاتا ہے۔ سُپر مون کا عمل اگر چاند گرہن کے دوران ہو تو یہ خونی چاند بن جاتا ہے۔ زمین کے انتہائی قریب ہونے کے باعث چاند کا رنگ پہلے نارنجی سے کتھئی اور پھر سرخ ہو جاتا ہے۔
یہ منظر انتہائی حسین ہوتا ہے لیکن بعض معاشروں میں بلڈ مون سے توہم پرستانہ عقائد منسوب ہیں جو خونی چاند کو دنیا کی تباہی کا اشارہ سمجھتے ہیں۔
کچھ ماہرین فلکیات کے مطابق ایسا زمین، چاند، سورج اور مریخ کے بیک وقت ایک دوسرے کے سامنے آنے پر بھی ہوتا ہے۔ امریکا، مغربی یورپ مغربی افریقا، انٹار کٹیکا کے کچھ حصہ میں اس چاند گرہن اور سپر مون کے منظر کو مکمل طور پر دیکھا جا سکے گا۔
ماہرین کے مطابق ایسا آخری دفعہ تینتیس سال قبل انیس سو بیاسی میں ہوا تھا اور اب ستائیس اور اٹھائیس ستمبر کی درمیانی رات ہونے جا رہا ہے۔
28 ستمبر کوتقریباً 30 سال بعد چاند زمین کے انتہائی قریب آئے گا، چاند گرہن 5 بجکر 11 منٹ پر شروع ہو گا اور 10 بجکر 22 منٹ پر ختم ہو جائے گا۔ محکمہ موسمیات کے مطابق 28 ستمبر کو پاکستان میں چاند گرہن ہو گا، چاند گرہن 5 بجکر 11 منٹ پر شروع ہو گا جو 10 بجکر 22 منٹ پر ختم ہو جائے گا۔ چاند کا رنگ سرخ ہو گا اور چاند معمول سے زیادہ بڑا نظر آئے گا۔

Pin It

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *